غزل 8

اشعار 4

وہ زہر دیتا تو سب کی نگہ میں آ جاتا

سو یہ کیا کہ مجھے وقت پہ دوائیں نہ دیں

  • شیئر کیجیے

اب نہیں لوٹ کے آنے والا

گھر کھلا چھوڑ کے جانے والا

مری طرف سے تو ٹوٹا نہیں کوئی رشتہ

کسی نے توڑ دیا اعتبار ٹوٹ گیا

  • شیئر کیجیے

دوہا 9

عادت سے لاچار ہے عادت نئی عجیب

جس دن کھایا پیٹ بھر سویا نہیں غریب

  • شیئر کیجیے

بھاری بوجھ پہاڑ سا کچھ ہلکا ہو جائے

جب میری چنتا بڑھے ماں سپنے میں آئے

  • شیئر کیجیے

چھیڑ چھاڑ کرتا رہا مجھ سے بہت نصیب

میں جیتا ترکیب سے ہارا وہی غریب

  • شیئر کیجیے

کتاب 4

خوابوں کا خیال

 

1986

میر سید علی غمگین دہلوی : حیات شخصیت اور شاعری

 

2008

سوا نیزے پہ سورج

 

1996

شب ریزے

 

1982

 

"گوالیار" کے مزید شعرا

  • مضطر خیرآبادی مضطر خیرآبادی
  • شکیل گوالیاری شکیل گوالیاری
  • مدن موہن دانش مدن موہن دانش
  • نذیر نظر نذیر نظر
  • اتل اجنبی اتل اجنبی
  • ستیش دوبے ستیارتھ ستیش دوبے ستیارتھ
  • جیوتی آزاد کھتری جیوتی آزاد کھتری
  • شفا گوالیاری شفا گوالیاری