Anjum Saleemi's Photo'

پاکستان کے اہم شاعر، اپنے سنجیدہ لہجے کے لیے معروف

پاکستان کے اہم شاعر، اپنے سنجیدہ لہجے کے لیے معروف

غزل

آئینہ صاف تھا دھندلا ہوا رہتا تھا میں

نعمان شوق

اچھے موسم میں تگ_و_تاز بھی کر لیتا ہوں

نعمان شوق

اس سے آگے تو بس لا_مکاں رہ گیا

نعمان شوق

ان دنوں خود سے فراغت ہی فراغت ہے مجھے

نعمان شوق

بجھنے دے سب دئے مجھے تنہائی چاہیئے

نعمان شوق

جست بھرتا ہوا فردا کے دہانے کی طرف

نعمان شوق

چلا ہوس کے جہانوں کی سیر کرتا ہوا

نعمان شوق

خاک چھانی نہ کسی دشت میں وحشت کی ہے

نعمان شوق

درد_وراثت پا لینے سے نام نہیں چل سکتا

نعمان شوق

دیوار پہ رکھا تو ستارے سے اٹھایا

نعمان شوق

ظہور_کشف_و_کرامات میں پڑا ہوا ہوں

نعمان شوق

مجھے بھی سہنی پڑے_گی مخالفت اپنی

نعمان شوق

کاغذ تھا میں دیے پہ مجھے رکھ دیا گیا

نعمان شوق

کل تو ترے خوابوں نے مجھ پر یوں ارزانی کی

نعمان شوق

نظم

انحراف

نعمان شوق

ایک محبوس نظم

نعمان شوق

بے_مصرف رشتوں کی فراغت

نعمان شوق

سرگوشی

نعمان شوق

مہاجر پرندوں کا سواگت

نعمان شوق

میں تمہارے لیے لے کے آیا ہوں

نعمان شوق

ہم بے_وطن خوابوں کے جولاہے ہیں

نعمان شوق

Recitation

aah ko chahiye ek umr asar hote tak SHAMSUR RAHMAN FARUQI