Arzoo Lakhnavi's Photo'

آرزو لکھنوی

1873 - 1951 | کراچی, پاکستان

ممتاز قبل از جدید شاعر،جگر مرادآبادی کے معاصر

ممتاز قبل از جدید شاعر،جگر مرادآبادی کے معاصر

تخلص : 'آرزو'

اصلی نام : محمد حسین

پیدائش : 16 Feb 1873 | لکھنؤ, اتر پردیش

وفات : 17 Apr 1951 | کراچی, سندھ

LCCN :n84042153

کھلنا کہیں چھپا بھی ہے چاہت کے پھول کا

لی گھر میں سانس اور گلی تک مہک گئی

سید انور حسین نام، عرف منجھو صاحب، تخلص آرزو۔۱۷؍فروری ۱۸۷۳ء کو لکھنؤ میں پیدا ہوئے۔ آپ کے والد میر ذاکر حسین ،یاس تخلص کرتے تھے۔ جناب آرزو کو بہت کم سنی سے شعرو سخن کا شوق تھا۔ جب ان کے والدکو ان کے شوق کا حال معلوم ہوا تو جلال لکھنوی کے پاس لے گئے اور ان کا شاگرد کرادیا۔آرزو نے مالی مشکلات کی وجہ سے کلکتہ میں فلم کمپنیوں کے لیے ڈرامے اور گیت لکھے۔ بمبئی میں بھی فلموں کے لیے گیت لکھے۔ تقسیم ہند کے بعد کراچی آگئے اور یہیں ۱۶؍اپریل۱۹۵۱ء کو انتقال ہوا۔آپ کے تین شعری مجموعے ’’فغان آرزو‘‘، ’’جان آرزو‘‘ اور ’’سریلی بانسری‘‘ شائع ہوچکے ہیں۔ آرزو جلال لکھنوی کے جانشین تھے۔ ان کی شاعری صحت زباں کے لحاظ سے سند کا درجہ رکھتی ہے۔ ’’سریلی بانسری‘‘ میں خالص ہندوستانی زبان میں شاعری کی ہے۔

بحوالۂ:پیمانۂ غزل(جلد اول)،محمد شمس الحق،صفحہ:260

موضوعات