اسلم محمود

غزل 21

اشعار 19

دیکھ آ کر کہ ترے ہجر میں بھی زندہ ہیں

تجھ سے بچھڑے تھے تو لگتا تھا کہ مر جائیں گے

ہم دل سے رہے تیز ہواؤں کے مخالف

جب تھم گیا طوفاں تو قدم گھر سے نکالا

پاؤں اس کے بھی نہیں اٹھتے مرے گھر کی طرف

اور اب کے راستہ بدلا ہوا میرا بھی ہے

گزرتے جا رہے ہیں قافلے تو ہی ذرا رک جا

غبار راہ تیرے ساتھ چلنا چاہتا ہوں میں

رات آتی ہے تو طاقوں میں جلاتے ہیں چراغ

خواب زندہ ہیں سو آنکھوں میں جلاتے ہیں چراغ

کتاب 69

"کانپور" کے مزید شعرا

Recitation

aah ko chahiye ek umr asar hote tak SHAMSUR RAHMAN FARUQI

Jashn-e-Rekhta | 2-3-4 December 2022 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate, New Delhi

GET YOUR FREE PASS
بولیے