aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر

اسلم محمود

غزل 21

اشعار 19

دیکھ آ کر کہ ترے ہجر میں بھی زندہ ہیں

تجھ سے بچھڑے تھے تو لگتا تھا کہ مر جائیں گے

ہم دل سے رہے تیز ہواؤں کے مخالف

جب تھم گیا طوفاں تو قدم گھر سے نکالا

پاؤں اس کے بھی نہیں اٹھتے مرے گھر کی طرف

اور اب کے راستہ بدلا ہوا میرا بھی ہے

اب یہ سمجھے کہ اندھیرا بھی ضروری شے ہے

بجھ گئیں آنکھیں اجالوں کی فراوانی سے

یہی نہیں کہ کسی یاد نے ملول کیا

کبھی کبھی تو یونہی بے سبب بھی روئے ہیں

کتاب 73

"کانپور" کے مزید شعرا

Recitation

Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

GET YOUR PASS
بولیے