noImage

بیخود بدایونی

1857 - 1912

نامور کلاسیکی شاعر، داغ دہلوی کے شاگرد، مجسٹریٹ کے عہدے پر فائز رہے

نامور کلاسیکی شاعر، داغ دہلوی کے شاگرد، مجسٹریٹ کے عہدے پر فائز رہے

اصلی نام : مولوی عبدالحئی

پیدائش : 17 Sep 1857 | بدایوں, اتر پردیش

وفات : 10 Nov 1912 | بدایوں, اتر پردیش

آنسو مری آنکھوں میں ہیں نالے مرے لب پر

سودا مرے سر میں ہے تمنا مرے دل میں

بیخود بدایونی
مولوی عبدالحئ نام، بیخود تخلص۔ ۱۷ستمبر۱۸۵۷ء کو بدایوں میں پیدا ہوئے۔ ۷۵۔۱۸۷۴ء میں وکالت کی سندحاصل کی۔ پہلے حالی کے شاگرد ہوئے بعد میں داغ سے اصلاح لینا شروع کی۔ والد کے انتقال کے بعدسنبھل اور اس کے بعدشاہ جہاں پور میں وکالت کرتے رہے۔ ریاست جو دھپور میں سپیشل مجسٹریٹ کے عہدے پر بھی فائز رہے۔ نومبر۱۹۱۲ء میں بدایوں میں انتقال ہوا۔ آ پ کی تصانیف کے نام یہ ہیں: ’’فسانۂ بیخود‘‘، ’’مرآۃ الخیال‘‘ وغیرہ۔

موضوعات