Jigar Barelvi's Photo'

جگر بریلوی

1890 - 1976

جگرمرادآبادی کے ہمعصر،مثنوی "پیام ساوتری" کے لیے مشہور،"حدیث خودی "کے نام سے سوانح حیات لکھی

جگرمرادآبادی کے ہمعصر،مثنوی "پیام ساوتری" کے لیے مشہور،"حدیث خودی "کے نام سے سوانح حیات لکھی

غزل 34

اشعار 15

قدم ملا کے زمانے کے ساتھ چل نہ سکے

بہت سنبھل کے چلے ہم مگر سنبھل نہ سکے

  • شیئر کیجیے

عشق کو ایک عمر چاہئے اور

عمر کا کوئی اعتبار نہیں

  • شیئر کیجیے

تم نہیں پاس کوئی پاس نہیں

اب مجھے زندگی کی آس نہیں

درد ہو دکھ ہو تو دوا کیجے

پھٹ پڑے آسماں تو کیا کیجے

  • شیئر کیجیے

آستاں بھی کوئی مل جائے گا اے ذوق نیاز

سر سلامت ہے تو سجدہ بھی ادا ہو جائے گا

  • شیئر کیجیے

کتاب 13

حدیث خودی

 

1959

حدیث خودی

 

1959

انتخاب کلام جگر بریلوی

 

1960

جگر بریلوی

 

2000

جگر بریلوی: شخصیت اور فن

 

1970

نالۂ جانسوز

 

1927

پرتو الہام

 

2012

پیام ساوتری

 

1954

رس

 

1960

صحت زبان

 

1958

تصویری شاعری 2

قدم ملا کے زمانے کے ساتھ چل نہ سکے بہت سنبھل کے چلے ہم مگر سنبھل نہ سکے

قدم ملا کے زمانے کے ساتھ چل نہ سکے بہت سنبھل کے چلے ہم مگر سنبھل نہ سکے

 

آڈیو 5

آہ ہم ہیں اور شکستہ_پائیاں

تم نہیں پاس کوئی پاس نہیں

جان اپنے لیے کھو لینے دے

Recitation

aah ko chahiye ek umr asar hote tak SHAMSUR RAHMAN FARUQI

مزید دیکھیے