Kanval Ziai's Photo'

کنول ضیائی

1927 - 2012

کنول ضیائی کے شعر

ہمارا خون کا رشتہ ہے سرحدوں کا نہیں

ہمارے خون میں گنگا بھی چناب بھی ہے

ہمارا دور اندھیروں کا دور ہے لیکن

ہمارے دور کی مٹھی میں آفتاب بھی ہے

چند سانسوں کے لئے بکتی نہیں خودداری

زندگی ہاتھ پہ رکھی ہے اٹھا کر لے جا

جس میں چھپا ہوا ہو وجود گناہ و کفر

اس معتبر لباس پہ تیزاب ڈال دو