Nami Nadri's Photo'

نامی نادری

1922 | سہارن پور, انڈیا

نامی نادری

غزل 10

اشعار 3

زندگی بس مسکرا کے رہ گئی

کیوں ہمیں ناحق رجھا کے رہ گئی

عروج پر ہے عزیزو فساد کا سورج

جبھی تو سوکھتی جاتی ہیں پیار کی جھیلیں

  • شیئر کیجیے

حسن والوں کی جسارت کیا کہیں

شرمساری سر جھکا کے رہ گئی

 

کتاب 3

 

"سہارن پور" کے مزید شعرا

Recitation

aah ko chahiye ek umr asar hote tak SHAMSUR RAHMAN FARUQI

بولیے