Sabir Dutt's Photo'

صابر دت

1938 - 2000 | ممبئی, ہندوستان

صابر دت ہریانہ کے نامور شاعر ہیں

صابر دت ہریانہ کے نامور شاعر ہیں

لوگ کرتے ہیں خواب کی باتیں

ہم نے دیکھا ہے خواب آنکھوں سے

مدتوں بعد اٹھائے تھے پرانے کاغذ

ساتھ تیرے مری تصویر نکل آئی ہے

یہ کیسی سیاست ہے مرے ملک پہ حاوی

انسان کو انساں سے جدا دیکھ رہا ہوں

خوابوں سے نہ جاؤ کہ ابھی رات بہت ہے

پہلو میں تم آؤ کہ ابھی رات بہت ہے

زلف کی شام صبح چہرے کی

یہی موسم جناب دے دیجے

پھر لائی ہے برسات تری یاد کا موسم

گلشن میں نیا پھول کھلا دیکھ رہا ہوں

جی بھر کے تمہیں دیکھ لوں تسکین ہو کچھ تو

مت شمع بجھاؤ کہ ابھی رات بہت ہے

رخ ان کا کہیں اور نظر اور طرف ہے

کس سمت سے آتی ہے قضا دیکھ رہا ہوں