صابر کے آڈیو

غزل

تمہارے عالم سے میرا عالم ذرا الگ ہے

صابر

خوبیوں کو مسخ کر کے عیب جیسا کر دیا

صابر

سچ یہی ہے کہ بہت آج گھن آتی ہے مجھے

صابر

سینت کر ایمان کچھ دن اور رکھنا ہے ابھی

صابر

مجھے قرار بھنور میں اسے کنارے میں

صابر

مستقر کی خواہش میں منتشر سے رہتے ہیں

صابر

ہماری بے_چینی اس کی پلکیں بھگو گئی ہے

صابر

Recitation

aah ko chahiye ek umr asar hote tak SHAMSUR RAHMAN FARUQI