غزل 13

اشعار 14

ترے تصور کی دھوپ اوڑھے کھڑا ہوں چھت پر

مرے لیے سردیوں کا موسم ذرا الگ ہے

رکھے رکھے ہو گئے پرانے تمام رشتے

کہاں کسی اجنبی سے رشتہ نیا بنائیں

سارے منظر حسین لگتے ہیں

دوریاں کم نہ ہوں تو بہتر ہے

مجھ سے کل محفل میں اس نے مسکرا کر بات کی

وہ مرا ہو ہی نہیں سکتا یہ پکا کر دیا

ہنس ہنس کے اس سے باتیں کیے جا رہے ہو تم

صابرؔ وہ دل میں اور ہی کچھ سوچتا نہ ہو

کتاب 2

دیوان صابر

 

 

رایگاں

 

1972

 

آڈیو 7

تمہارے عالم سے میرا عالم ذرا الگ ہے

خوبیوں کو مسخ کر کے عیب جیسا کر دیا

سچ یہی ہے کہ بہت آج گھن آتی ہے مجھے

Recitation

aah ko chahiye ek umr asar hote tak SHAMSUR RAHMAN FARUQI

"اورنگ آباد" کے مزید شعرا

  • سراج اورنگ آبادی سراج اورنگ آبادی
  • قاضی سلیم قاضی سلیم
  • عشق اورنگ آبادی عشق اورنگ آبادی
  • مدحت الاختر مدحت الاختر
  • قمر اقبال قمر اقبال
  • بشر نواز بشر نواز
  • شاہ حسین نہری شاہ حسین نہری
  • جے پی سعید جے پی سعید
  • سکندر علی وجد سکندر علی وجد
  • فاروق شمیم فاروق شمیم