Shahid Meer's Photo'

شاہد میر

1949 - | بھوپال, ہندوستان

ہندوستانی موسیقی کے ماہر اور گلوکار

ہندوستانی موسیقی کے ماہر اور گلوکار

آنگن ہے جل تھل بہت دیواروں پر گھاس

گھر کے اندر بھی ملا شاہدؔ کو بنواس

درد ہے دولت کی طرح غم ٹھہرا جاگیر

اپنی اس جاگیر میں خوش ہیں شاہدؔ میر

ہر اک شے بے میل تھی کیسے بنتی بات

آنکھوں سے سپنے بڑے نیند سے لمبی رات

جیون جینا کٹھن ہے وش پینا آسان

انساں بن کر دیکھ لو او شنکرؔ بھگوان

کاغذ پر لکھ دیجئے اپنے سارے بھید

دل میں رہے تو آنچ سے ہو جائیں گے چھید

راس آئی کچھ اس طرح شبدوں کی جاگیر

شاہدؔ پیچھے رہ گئے آگے بڑھ گئے میرؔ

شاہدؔ لکھنا ہے مجھے یہ کس کی تعریف

ڈرا ڈرا سا قافیہ سہمی ہوئی ردیف

شب گزری بجھنے لگا روشنیوں کا شہر

لوٹی ساحل کی طرف تھکی تھکی اک لہر

تعطیلیں رخصت ہوئیں کھلے سبھی اسکول

سڑکوں پر کھلنے لگے پیارے پیارے پھول

ذہن میں تو آنکھوں میں تو دل میں ترا وجود

میرا تو بس نام ہے ہر جا تو موجود

Added to your favorites

Removed from your favorites