Taj Saeed's Photo'

تاج سعید

1933 - 2002 | پیشاور, پاکستان

تاج سعید

غزل 6

نظم 2

 

اشعار 4

میں نے ظلمت کے فسوں سے بھاگنا چاہا مگر

میرے پیچھے بھاگتی پھرتی مری رسوائی تھی

کس نے آ کر ہم کو دی آواز پچھلی رات میں

کون ہم کو چھیڑنے آیا ہے ان لمحات میں

پتا پتا شاخ سے ٹوٹے دروازوں پہ وحشت سی

یارو پریم کتھا میں کس نے درد کی تان ملائی ہے

مسئلہ یہ بھی تو ہے اس عہد کا اے جان جاں

کیوں نچھاور جاں کریں کس کے لیے زندہ رہیں

دوہا 2

ہر اک کا دل موہ لیتی تھی اس کی اک مسکان

یہ مسکان تھی ساتھ اس کے چہرے کی پہچان

  • شیئر کیجیے

مجھ سے کنی کاٹ نہ گوری میں ہوں تیری چھایا

میں اک داتا جوگی بن کر تیری گلی میں آیا

  • شیئر کیجیے
 

کتاب 7

 

"پیشاور" کے مزید شعرا

 

Recitation

aah ko chahiye ek umr asar hote tak SHAMSUR RAHMAN FARUQI

بولیے