Yaqoob Yawar's Photo'

یعقوب یاور

1952 | بنارس, ہندوستان

اشعار 6

پہاڑ جیسی عظمتوں کا داخلہ تھا شہر میں

کہ لوگ آگہی کا اشتہار لے کے چل دیے

تو لا مکاں میں رہے اور میں مکاں میں اسیر

یہ کیا کہ مجھ پہ اطاعت تری حرام ہوئی

شہر سخن عجیب ہو گیا ہے

ناقد یہاں ادیب ہو گیا ہے

لہو مہکا تو سارا شہر پاگل ہو گیا ہے

میں کس صف سے اٹھوں کس کے لیے خنجر نکالوں

آج بھی زخم ہی کھلتے ہیں سر شاخ نہال

نخل خواہش پہ وہی بے ثمری رہنا تھی

غزل 9

کتاب 24

الف

 

1988

اقلیم اسود

 

1990

عزازیل

 

2001

درہ خیبر کے اس پار

 

1988

دل مُن

 

1998

دل من

 

1998

ڈاکٹر ژواگو

 

2000

امروز

عصری مضامین

1990

جہاد

 

2009

جہاد

 

2009

"بنارس" کے مزید شعرا

  • حفیظ بنارسی حفیظ بنارسی
  • بھارتیندو ہریش چندر بھارتیندو ہریش چندر
  • کبیر اجمل کبیر اجمل
  • ڈاکٹر بھاؤنا شریواستو ڈاکٹر بھاؤنا شریواستو
  • نذیر بنارسی نذیر بنارسی
  • سراج العارفین سراج سراج العارفین سراج
  • دیپک پرجاپتی خالص دیپک پرجاپتی خالص
  • انیتا موہن انیتا موہن
  • محمود عالم محمود عالم
  • عامر سوقی عامر سوقی