Zaheer Dehlvi's Photo'

ظہیرؔ دہلوی

1825 - 1911 | دلی, ہندوستان

غزل 49

اشعار 35

سمجھیں گے نہ اغیار کو اغیار کہاں تک

کب تک وہ محبت کو محبت نہ کہیں گے

چاہت کا جب مزا ہے کہ وہ بھی ہوں بے قرار

دونوں طرف ہو آگ برابر لگی ہوئی

  • شیئر کیجیے

شرکت گناہ میں بھی رہے کچھ ثواب کی

توبہ کے ساتھ توڑیئے بوتل شراب کی

  • شیئر کیجیے

خیر سے رہتا ہے روشن نام نیک

حشر تک جلتا ہے نیکی کا چراغ

عشق ہے عشق تو اک روز تماشا ہوگا

آپ جس منہ کو چھپاتے ہیں دکھانا ہوگا

  • شیئر کیجیے

کتاب 5

اٹھارہ سو ستاون کے چشم دید حالات

 

2006

اوراق کربلا

 

1997

داستان غدر

 

1955

دیوان ظہیر

جلد۔001

1899

انتخاب کلام ظہیر دہلوی

 

1989

 

آڈیو 15

ان کو حال_دل_پر_سوز سنا کر اٹھے

بزم_دشمن میں جا کے دیکھ لیا

بگڑ کر عدو سے دکھاتے ہیں آپ

Recitation

aah ko chahiye ek umr asar hote tak SHAMSUR RAHMAN FARUQI

متعلقہ شعرا

  • انور دہلوی انور دہلوی بھائی
  • شیخ ابراہیم ذوقؔ شیخ ابراہیم ذوقؔ استاد
  • بہادر شاہ ظفر بہادر شاہ ظفر شاگرد

"دلی" کے مزید شعرا

  • مرزا غالب مرزا غالب
  • شیخ ظہور الدین حاتم شیخ ظہور الدین حاتم
  • میر تقی میر میر تقی میر
  • فرحت احساس فرحت احساس
  • بیخود دہلوی بیخود دہلوی
  • انیس الرحمان انیس الرحمان
  • آبرو شاہ مبارک آبرو شاہ مبارک
  • شاہ نصیر شاہ نصیر
  • مومن خاں مومن مومن خاں مومن
  • انس خان انس خان