Azhar Adeeb's Photo'

اظہر ادیب

1949 | گھوٹکی, پاکستان

شاعر،انشائیہ نگار اور ادیب

شاعر،انشائیہ نگار اور ادیب

اظہر ادیب

غزل 16

اشعار 34

تو اپنی مرضی کے سبھی کردار آزما لے

مرے بغیر اب تری کہانی نہیں چلے گی

  • شیئر کیجیے

ہم نے گھر کی سلامتی کے لئے

خود کو گھر سے نکال رکھا ہے

لہجے اور آواز میں رکھا جاتا ہے

اب تو زہر الفاظ میں رکھا جاتا ہے

ذرا سی دیر تجھے آئنہ دکھایا ہے

ذرا سی بات پر اتنے خفا نہیں ہوتے

  • شیئر کیجیے

ایک لمحے کو سہی اس نے مجھے دیکھا تو ہے

آج کا موسم گزشتہ روز سے اچھا تو ہے

  • شیئر کیجیے

Recitation

aah ko chahiye ek umr asar hote tak SHAMSUR RAHMAN FARUQI

بولیے