Ehteram Islam's Photo'

احترام اسلام

1949 | الہٰ آباد, انڈیا

احترام اسلام کے شعر

شعر کے روپ میں دیتے رہنا

احترامؔ اپنی خبر آگے بھی

اسی سے مجھ کو ملا اشتیاق منزل کا

مرے سفر کو فضائے سفر اسی سے ملی

ساتھ رکھئے کام آئے گا بہت نام خدا

خوف گر جاگا تو پھر کس کو صدا دی جائے گی

اس بار بھی شعلوں نے مچا ڈالی تباہی

اس بار بھی شعلوں کو ہوا دی گئی شاید

توقیر اندھیروں کی بڑھا دی گئی شاید

اک شمع جو روشن تھی بجھا دی گئی شاید

یاد تھا سقراطؔ کا قصہ سبھی کو احترامؔ

سوچئے ایسے میں بڑھ کر سچ کو سچ کہتا تو کون

لڑکھڑا کر گر پڑی اونچی عمارت دفعتاً

دفعتاً تعمیر کی کرسی پہ کھنڈر جم گیا

اہل دنیا سے مجھے تو کوئی اندیشہ نہ تھا

نام تیرا کس لئے مرے لبوں پر جم گیا

Recitation

aah ko chahiye ek umr asar hote tak SHAMSUR RAHMAN FARUQI