Fahmi Badayuni's Photo'

فہمی بدایونی

1952 | بدایوں, انڈیا

فہمی بدایونی

غزل 19

اشعار 15

پوچھ لیتے وہ بس مزاج مرا

کتنا آسان تھا علاج مرا

میں نے اس کی طرف سے خط لکھا

اور اپنے پتے پہ بھیج دیا

  • شیئر کیجیے

خوشی سے کانپ رہی تھیں یہ انگلیاں اتنی

ڈلیٹ ہو گیا اک شخص سیو کرنے میں

  • شیئر کیجیے

پریشاں ہے وہ جھوٹا عشق کر کے

وفا کرنے کی نوبت آ گئی ہے

  • شیئر کیجیے

خوں پلا کر جو شیر پالا تھا

اس نے سرکس میں نوکری کر لی

  • شیئر کیجیے

تصویری شاعری 2

 

متعلقہ بلاگ

 

"بدایوں" کے مزید شعرا

Recitation

aah ko chahiye ek umr asar hote tak SHAMSUR RAHMAN FARUQI

Jashn-e-Rekhta | 2-3-4 December 2022 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate, New Delhi

GET YOUR FREE PASS
بولیے