Ishrat Qadri's Photo'

عشرت قادری

1926

عشرت قادری

غزل 17

اشعار 7

ان اندھیروں سے پرے اس شب غم سے آگے

اک نئی صبح بھی ہے شام الم سے آگے

وہ تیرے بچھڑنے کا سماں یاد جب آیا

بیتے ہوئے لمحوں کو سسکتے ہوئے دیکھا

کون دیکھے گا مجھ میں اب چہرہ

آئینہ تھا بکھر گیا ہوں میں

ظاہری شکل میری زندہ ہے

اور اندر سے مر گیا ہوں میں

یوں زندگی گزر رہی ہے میری

جو ان کی ہے وہی خوشی ہے میری

کتاب 7

 

Recitation

aah ko chahiye ek umr asar hote tak SHAMSUR RAHMAN FARUQI

بولیے