Jaun Eliya's Photo'

جون ایلیا

1931 - 2002 | کراچی, پاکستان

پاکستان کے اہم ترین جدید شاعروں میں شامل، اپنے غیر روایتی طور طریقوں کے لیے مشہور

پاکستان کے اہم ترین جدید شاعروں میں شامل، اپنے غیر روایتی طور طریقوں کے لیے مشہور

غزل

جز گماں اور تھا ہی کیا میرا

کتنے عیش سے رہتے ہوں گے کتنے اتراتے ہوں گے

کتنے عیش سے رہتے ہوں_گے کتنے اتراتے ہوں_گے

اک زخم بھی یاران_بسمل نہیں آنے کا

اے وصل کچھ یہاں نہ ہوا کچھ نہیں ہوا

تجھ میں پڑا ہوا ہوں حرکت نہیں ہے مجھ میں

خوب ہے شوق کا یہ پہلو بھی

دل نے کیا ہے قصد_سفر گھر سمیٹ لو

دل_برباد کو آباد کیا ہے میں نے

سوچا ہے کہ اب کار_مسیحا نہ کریں_گے

شام ہوئی ہے یار آئے ہیں یاروں کے ہم_راہ چلیں

لازم ہے اپنے آپ کی امداد کچھ کروں

کوئی دم بھی میں کب اندر رہا ہوں

کیا کہیں تم سے بود_و_باش اپنی

کیا ہو گیا ہے گیسوئے_خم_دار کو ترے

ہم تو جیسے وہاں کے تھے ہی نہیں

ہمارے زخم_تمنا پرانے ہو گئے ہیں

یادوں کا حساب رکھ رہا ہوں

نظم

دریچہ_ہائے_خیال

راتیں سچی ہیں دن جھوٹے ہیں

رمز

شاید

فن پارہ

قاتل

ناکارہ

وہ

Recitation

aah ko chahiye ek umr asar hote tak SHAMSUR RAHMAN FARUQI

Added to your favorites

Removed from your favorites