Khursheed Rizvi's Photo'

خورشید رضوی

1942 | پاکستان

غزل 52

نظم 15

اشعار 26

تو مجھے بنتے بگڑتے ہوئے اب غور سے دیکھ

وقت کل چاک پہ رہنے دے نہ رہنے دے مجھے

ہیں مری راہ کا پتھر مری آنکھوں کا حجاب

زخم باہر کے جو اندر نہیں جانے دیتے

یہ دور وہ ہے کہ بیٹھے رہو چراغ تلے

سبھی کو بزم میں دیکھو مگر دکھائی نہ دو

ای- کتاب 1

(کلیات (یکجا

 

2012

 

تصویری شاعری 2

آخر کو ہنس پڑیں_گے کسی ایک بات پر رونا تمام عمر کا بے_کار جائے_گا

آخر کو ہنس پڑیں_گے کسی ایک بات پر رونا تمام عمر کا بے_کار جائے_گا

 

ویڈیو 6

This video is playing from YouTube

ویڈیو کا زمرہ
کلام شاعر بہ زبان شاعر

خورشید رضوی

Dr. Khurshid Rizvi at a mushaira

خورشید رضوی

Khurshid Rizvi at a mushaira in Pakistan in 2011

خورشید رضوی

phir naya saal naya maah-emoharram aya

خورشید رضوی

sab kahe deti hai ashkon ki ravani afsos

خورشید رضوی

یہ جو ننگ تھے یہ جو نام تھے مجھے کھا گئے

خورشید رضوی