noImage

ممنونؔ نظام الدین

? - 1844 | دلی, ہندوستان

غزل 14

اشعار 8

یہ نہ جانے تھے کہ اس محفل میں دل رہ جائے گا

ہم یہ سمجھے تھے چلے آئیں گے دم بھر دیکھ کر

i did not know that at her place my heart would choose to stay

I had thought a moments glance and we would come away

  • شیئر کیجیے

کل وصل میں بھی نیند نہ آئی تمام شب

ایک ایک بات پر تھی لڑائی تمام شب

خواب میں بوسہ لیا تھا رات بلب نازکی

صبح دم دیکھا تو اس کے ہونٹھ پہ بتخالہ تھا

کوئی ہمدرد نہ ہمدم نہ یگانہ اپنا

روبرو کس کے کہیں ہم یہ فسانا اپنا

گماں نہ کیونکہ کروں تجھ پہ دل چرانے کا

جھکا کے آنکھ سبب کیا ہے مسکرانے کا

کتاب 3

کلیات ممنون

جلد۔001

1972

مختار اشعار

جلد-001

1896

مطالعہ میر نظام الدین ممنون

حیات شخصیت اور شاعری

1972

 

آڈیو 10

تجھے نقش_ہستی مٹایا تو دیکھا

تجھے کچھ یاد ہے پہلا وہ عالم عشق_پنہاں کا

جو بعد_مرگ بھی دل کو رہی کنار میں جا

Recitation

aah ko chahiye ek umr asar hote tak SHAMSUR RAHMAN FARUQI

"دلی" کے مزید شعرا

  • شیخ ظہور الدین حاتم شیخ ظہور الدین حاتم
  • داغؔ دہلوی داغؔ دہلوی
  • شاہ نصیر شاہ نصیر
  • حسرتؔ موہانی حسرتؔ موہانی
  • آبرو شاہ مبارک آبرو شاہ مبارک
  • بیخود دہلوی بیخود دہلوی
  • راجیندر منچندا بانی راجیندر منچندا بانی
  • انیس الرحمان انیس الرحمان
  • بہادر شاہ ظفر بہادر شاہ ظفر
  • شیخ ابراہیم ذوقؔ شیخ ابراہیم ذوقؔ