noImage

میر سوز

1721 - 1798 | دلی, ہندوستان

غزل 17

اشعار 7

جس کا تجھ سا حبیب ہووے گا

کون اس کا رقیب ہووے گا

سر زانو پہ ہو اس کے اور جان نکل جائے

مرنا تو مسلم ہے ارمان نکل جائے

  • شیئر کیجیے

رسوا ہوا خراب ہوا مبتلا ہوا

وہ کون سی گھڑی تھی کہ تجھ سے جدا ہوا

  • شیئر کیجیے

ان سے اور مجھ سے یہی شرط وفا ٹھہری ہے

وہ ستم ڈھائیں مگر ان کو ستمگر نہ کہوں

  • شیئر کیجیے

جس دن سے یار مجھ سے وہ شوخ آشنا ہوا

رسوا ہوا خراب ہوا مبتلا ہوا

  • شیئر کیجیے

کتاب 7

دیوان میر سوز

 

1963

دیوان سوز

 

1905

انتخاب کلام میر سوز

 

2000

انتخاب کلام میر سوز

 

1991

انتخاب دیوان میر سوز

 

 

انتخاب میر سوز

 

1983

کلیات سوز

 

 

 

آڈیو 10

اپنے نالے میں گر اثر ہوتا

اگر میں جانتا ہے عشق میں دھڑکا جدائی کا

ترا ہم نے جس کو طلب_گار دیکھا

Recitation

aah ko chahiye ek umr asar hote tak SHAMSUR RAHMAN FARUQI

متعلقہ شعرا

  • آصف الدولہ آصف الدولہ شاگرد
  • آغا محمد تقی خان ترقی آغا محمد تقی خان ترقی شاگرد

"دلی" کے مزید شعرا

  • شیخ ظہور الدین حاتم شیخ ظہور الدین حاتم
  • داغؔ دہلوی داغؔ دہلوی
  • شاہ نصیر شاہ نصیر
  • حسرتؔ موہانی حسرتؔ موہانی
  • آبرو شاہ مبارک آبرو شاہ مبارک
  • بیخود دہلوی بیخود دہلوی
  • راجیندر منچندا بانی راجیندر منچندا بانی
  • انیس الرحمان انیس الرحمان
  • بہادر شاہ ظفر بہادر شاہ ظفر
  • شیخ ابراہیم ذوقؔ شیخ ابراہیم ذوقؔ