P P Srivastava Rind's Photo'

پی.پی سری واستو رند

1950 | نوئیڈا, انڈیا

پی.پی سری واستو رند

غزل 20

اشعار 9

مانا کہ زلزلہ تھا یہاں کم بہت ہی کم

بستی میں بچ گئے تھے مکاں کم بہت ہی کم

آستینوں میں چھپا کر سانپ بھی لائے تھے لوگ

شہر کی اس بھیڑ میں کچھ لوگ بازی گر بھی تھے

کوئی دستک نہ کوئی آہٹ تھی

مدتوں وہم کے شکار تھے ہم

آسودگی نے تھپکیاں دے کر سلا دیا

گھر کی ضرورتوں نے جگایا تو ڈر لگا

سرخ موسم کی کہانی تو پرانی ہو گئی

کھل گیا موسم تو سارے شہر میں چرچا ہوا

کتاب 12

ویڈیو 7

This video is playing from YouTube

ویڈیو کا زمرہ
کلام شاعر بہ زبان شاعر
Chand ki Qandeel jalte hi ujala ho gaya hai

PP Srivastav Rind is one of the noted poets of the modern times. More than ten poetry collection have been published so far. He can be seen reciting his verses at Rekhta Studio. پی.پی سری واستو رند

پی.پی سری واستو رند

اندھیرے ڈھونڈنے نکلے کھنڈر کیوں

پی.پی سری واستو رند

بے_تعلق روح کا جب جسم سے رشتہ ہوا

پی.پی سری واستو رند

پیش_منظر جو تماشے تھے پس_منظر بھی تھے

پی.پی سری واستو رند

ممتا_بھری نگاہ نے روکا تو ڈر لگا

پی.پی سری واستو رند

نشاط_درد کے موسم میں گر نمی کم ہے

پی.پی سری واستو رند

آڈیو 10

اندھیرے بند کمروں میں پڑے تھے

اندھیرے ڈھونڈنے نکلے کھنڈر کیوں

بے_تعلق روح کا جب جسم سے رشتہ ہوا

Recitation

aah ko chahiye ek umr asar hote tak SHAMSUR RAHMAN FARUQI

"نوئیڈا" کے مزید شعرا

Recitation

aah ko chahiye ek umr asar hote tak SHAMSUR RAHMAN FARUQI

Jashn-e-Rekhta | 2-3-4 December 2022 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate, New Delhi

GET YOUR FREE PASS
بولیے