noImage

قمر بدایونی

1876 - 1941 | بدایوں, ہندوستان

قمر بدایونی

اشعار 3

عید کا دن ہے گلے آج تو مل لے ظالم

رسم دنیا بھی ہے موقع بھی ہے دستور بھی ہے

  • شیئر کیجیے

نامہ بر تو ہی بتا تو نے تو دیکھے ہوں گے

کیسے ہوتے ہیں وہ خط جن کے جواب آتے ہیں

  • شیئر کیجیے

کہوں کچھ ان سے مگر یہ خیال ہوتا ہے

شکایتوں کا نتیجہ ملال ہوتا ہے

  • شیئر کیجیے
 

کتاب 1

دلہنوں کی مجلس باتصویر

 

 

 

"بدایوں" کے مزید شعرا

  • فانی بدایونی فانی بدایونی
  • فہمی بدایونی فہمی بدایونی
  • احمد عظیم احمد عظیم
  • حسیب سوز حسیب سوز
  • ڈاکٹر ارملیش ڈاکٹر ارملیش
  • انیس قلب انیس قلب
  • عمران بدایوںی عمران بدایوںی
  • عزیز بدایونی عزیز بدایونی
  • اجول وششٹھا اجول وششٹھا
  • مذاق بدایونی مذاق بدایونی