noImage

رند لکھنوی

1797 - 1857 | لکھنؤ, انڈیا

رند لکھنوی

غزل 37

اشعار 51

ٹوٹے بت مسجد بنی مسمار بت خانہ ہوا

جب تو اک صورت بھی تھی اب صاف ویرانہ ہوا

چاندنی راتوں میں چلاتا پھرا

چاند سی جس نے وہ صورت دیکھ لی

کعبے کو جاتا کس لیے ہندوستاں سے میں

کس بت میں شہر ہند کے شان خدا نہ تھی

  • شیئر کیجیے

آ عندلیب مل کے کریں آہ و زاریاں

تو ہائے گل پکار میں چلاؤں ہائے دل

  • شیئر کیجیے

موت آ جائے قید میں صیاد

آرزو ہو اگر رہائی کی

  • شیئر کیجیے

قطعہ 1

 

کتاب 9

 

"لکھنؤ" کے مزید شعرا

Recitation

aah ko chahiye ek umr asar hote tak SHAMSUR RAHMAN FARUQI

Jashn-e-Rekhta | 2-3-4 December 2022 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate, New Delhi

GET YOUR FREE PASS
بولیے