Saeed Qais's Photo'

سعید قیس

- 2018 | بحرین

سعید قیس

غزل 18

نظم 3

 

اشعار 9

میں بھی اپنی ذات میں آباد ہوں

میرے اندر بھی قبیلے ہیں بہت

چاند مشرق سے نکلتا نہیں دیکھا میں نے

تجھ کو دیکھا ہے تو تجھ سا نہیں دیکھا میں نے

یہ واقعہ مری آنکھوں کے سامنے کا ہے

شراب ناچ رہی تھی گلاس بیٹھے رہے

تم اپنے دریا کا رونا رونے آ جاتے ہو

ہم تو اپنے سات سمندر پیچھے چھوڑ آئے ہیں

تم سے ملنے کا بہانہ تک نہیں

اور بچھڑ جانے کے حیلے ہیں بہت

کتاب 1

 

متعلقہ شعرا

Recitation

aah ko chahiye ek umr asar hote tak SHAMSUR RAHMAN FARUQI

Jashn-e-Rekhta | 2-3-4 December 2022 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate, New Delhi

GET YOUR FREE PASS
بولیے