Sagheer Malal's Photo'

صغیر ملال

1951 - 1992 | کراچی, پاکستان

غزل 19

اشعار 16

زمانے بھر سے الجھتے ہیں جس کی جانب سے

اکیلے پن میں اسے ہم بھی کیا نہیں کہتے

سب سوالوں کے جواب ایک سے ہو سکتے ہیں

ہو تو سکتے ہیں مگر ایسا کہاں ہوتا ہے

ان سے بچنا کہ بچھاتے ہیں پناہیں پہلے

پھر یہی لوگ کہیں کا نہیں رہنے دیتے

ای- کتاب 2

آفرینش

 

1985

انگلیوں پر گنتی کا زمانہ

 

1983

 

تصویری شاعری 1

جس کو طے کر نہ سکے آدمی صحرا ہے وہی اور آخر مرے رستے میں بھی آیا ہے وہی یہ الگ بات کہ ہم رات کو ہی دیکھ سکیں ورنہ دن کو بھی ستاروں کا تماشا ہے وہی اپنے موسم میں پسند آیا ہے کوئی چہرہ ورنہ موسم تو بدلتے رہے چہرہ ہے وہی ایک لمحے میں زمانہ ہوا تخلیق ملالؔ وہی لمحہ ہے یہاں اور زمانہ ہے وہی

 

شعرا کے مزید "کراچی"

  • صابر وسیم صابر وسیم
  • کوثر نیازی کوثر نیازی
  • ادیب سہارنپوری ادیب سہارنپوری
  • عشرت رومانی عشرت رومانی
  • سراج منیر سراج منیر
  • لیاقت علی عاصم لیاقت علی عاصم
  • فاطمہ حسن فاطمہ حسن
  • احمد جاوید احمد جاوید
  • حکیم ناصر حکیم ناصر
  • تنویر انجم تنویر انجم