noImage

شرف مجددی

غزل 18

اشعار 22

دل میں مرے جگر میں مرے آنکھ میں مری

ہر جا ہے دوست اور نہیں ملتی ہے جائے دوست

  • شیئر کیجیے

اللہ اللہ خصوصیت ذات حسنین

ساری امت کے ہیں پوتوں سے نواسے بڑھ کر

تیری آنکھیں جسے چاہیں اسے اپنا کر لیں

کاش ایسا ہی سکھا دیں کوئی افسوں مجھ کو

  • شیئر کیجیے

اس پردے میں یہ حسن کا عالم ہے الٰہی

بے پردہ وہ ہو جائیں تو کیا جانئے کیا ہو

  • شیئر کیجیے

حضرت ناصح بھی مے پینے لگے

اب مجھے سمجھانے والا کون تھا

کتاب 1

دیوان شرف مجددی

 

1937