Tek Chand Bahar's Photo'

ٹیک چند بہار

1687 - 1766 | دلی, ہندوستان

اشعار 5

ناز بے جا و لطف بے موقع

دلبروں کی ادا ہے کیا کیا کچھ

  • شیئر کیجیے

ہمیں واعظ ڈراتا کیوں ہے دوزخ کے عذابوں سے

معاصی گو ہمارے بیش ہوں کچھ مغفرت کم ہے

  • شیئر کیجیے

نہیں معلوم کیا حکمت ہے شیخ اس آفرینش کی

ہمیں ایسا خراباتی کیا تجھ کو مناجاتی

  • شیئر کیجیے

وہی اک آسماں ہے جس کو ہم تم تار کہتے ہیں

کبھی تسبیح کہتے ہیں کبھی زنار کہتے ہیں

  • شیئر کیجیے

کہتے ہیں عندلیب گرفتار مجھ کو دیکھ

امید جیونے کی نہیں اس بہار میں

  • شیئر کیجیے

کتاب 1

بہار بوستاں

شرح بوستان

1891

 

"دلی" کے مزید شعرا

  • شیخ ظہور الدین حاتم شیخ ظہور الدین حاتم
  • داغؔ دہلوی داغؔ دہلوی
  • شاہ نصیر شاہ نصیر
  • حسرتؔ موہانی حسرتؔ موہانی
  • آبرو شاہ مبارک آبرو شاہ مبارک
  • بیخود دہلوی بیخود دہلوی
  • راجیندر منچندا بانی راجیندر منچندا بانی
  • انیس الرحمان انیس الرحمان
  • بہادر شاہ ظفر بہادر شاہ ظفر
  • شیخ ابراہیم ذوقؔ شیخ ابراہیم ذوقؔ