غزل 7

اشعار 4

میں ٹوٹنے دیتا نہیں رنگوں کا تسلسل

زخموں کو ہرا کرتا ہوں بھر جانے کے ڈر سے

اک قصۂ طویل ہے افسانہ دشت کا

آخر کہیں تو ختم ہو ویرانہ دشت کا

بھٹک رہا ہوں میں اس دشت سنگ میں کب سے

ابھی تلک تو در آئینہ کھلا نہ ملا

ای- کتاب 2

عبدالرحیم خان خانان اور ان کے دوہے

 

1968