غزل 7

اشعار 4

امن اور آشتی سے اس کو کیا

اس کا مقصد تو انتشار میں ہے

یہ اپنی بے بسی ہے یا کہ اپنی بے حسی یارو

ہے اپنا ہاتھ ان کے سامنے جو خود بھکاری ہیں

ہماری مفلسی آوارگی پہ تم کو حیرت کیوں

ہمارے پاس جو کچھ ہے وہ سوغاتیں تمہاری ہیں

اپنے لیے ہی مشکل ہے

عزت سے جی پانا بھی

کتاب 2

تصویر کا درخت

 

 

تتلیاں آس پاس

 

2007

 

ویڈیو 7

This video is playing from YouTube

ویڈیو کا زمرہ
کلام شاعر بہ زبان شاعر
Ghut ghut ke mar jana bhi, hasna aur hasana bhi_Ghazal

عزیز انصاری

Hum usko bhool baithe hain andhre humpe taari hain

عزیز انصاری

Naadar mein imdad ka jazba bhi to dekho

عزیز انصاری

Raaz qudrat ke humne na jaane kai

عزیز انصاری

Sukoon-e-dil hua haasil, bala se maal-o-zar khoya

عزیز انصاری

گھٹ گھٹ کر مر جانا بھی

عزیز انصاری

ہم اس کو بھول بیٹھے ہیں اندھیرے ہم پہ طاری ہیں

عزیز انصاری

مزید دیکھیے

"اندور" کے مزید شعرا

  • دھیریندر سنگھ فیاض دھیریندر سنگھ فیاض
  • راحت اندوری راحت اندوری
  • رازق انصاری رازق انصاری
  • شاداں اندوری شاداں اندوری
  • مکیش اندوری مکیش اندوری
  • وکاس جوشی واحد وکاس جوشی واحد
  • آتش اندوری آتش اندوری
  • حنیف دانش اندوری حنیف دانش اندوری
  • نتیش کشواہا نتیش کشواہا
  • ششی کانت ورما ششی کانت ورما