aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر
Ehtisham ul Haq Siddiqui's Photo'

احتشام الحق صدیقی

مظفر نگر, انڈیا

احتشام الحق صدیقی کے اشعار

میں اک مزدور ہوں روٹی کی خاطر بوجھ اٹھاتا ہوں

مری قسمت ہے بار حکمرانی پشت پر رکھنا

تو مرد مومن ہے اپنی منزل کو آسمانوں پہ دیکھ ناداں

کہ راہ ظلمت میں ساتھ دے گا کوئی چراغ علیل کب تک

یہ دنیا ہے یہاں اصلی کہانی پشت پر رکھنا

لبوں پر پیاس رکھنا اور پانی پشت پر رکھنا

ترے بدن کی نزاکتوں کا ہوا ہے جب ہم رکاب موسم

نظر نظر میں کھلا گیا ہے شرارتوں کے گلاب موسم

شعور نو عمر ہوں نہ مجھ کو متاع رنج و ملال دینا

کہ مجھ کو آتا نہیں غموں کو خوشی کے سانچوں میں ڈھال دینا

Recitation

Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

GET YOUR PASS
بولیے