Ehtisham ul Haq Siddiqui's Photo'

احتشام الحق صدیقی

مظفر نگر, ہندوستان

تو مرد مومن ہے اپنی منزل کو آسمانوں پہ دیکھ ناداں

کہ راہ ظلمت میں ساتھ دے گا کوئی چراغ علیل کب تک

یہ دنیا ہے یہاں اصلی کہانی پشت پر رکھنا

لبوں پر پیاس رکھنا اور پانی پشت پر رکھنا

میں اک مزدور ہوں روٹی کی خاطر بوجھ اٹھاتا ہوں

مری قسمت ہے بار حکمرانی پشت پر رکھنا

شعور نو عمر ہوں نہ مجھ کو متاع رنج و ملال دینا

کہ مجھ کو آتا نہیں غموں کو خوشی کے سانچوں میں ڈھال دینا

ترے بدن کی نزاکتوں کا ہوا ہے جب ہم رکاب موسم

نظر نظر میں کھلا گیا ہے شرارتوں کے گلاب موسم