Javed Nadeem's Photo'

جاوید ندیم

1958 | ممبئی, انڈیا

جاوید ندیم

غزل 7

نظم 25

اشعار 4

جو رہنما تھے میرے کہاں ہیں وہ نقش پا

منزل پہ چھوڑتا تھا جو رستہ کدھر گیا

کون سنتا ہے یہاں پست صدائی اتنی

تم اگر چیخ کے بولو تو اثر بھی ہوگا

یہ کس کے آسماں کی حدوں میں چھپا ہوں میں

اپنی زمیں سے اٹھ کے کہاں آ گیا ہوں میں

اک نہ اک دن تو مسخر اس کو ہونا ہے ندیمؔ

وہ خلاؤں کا مکیں ہے نور کی رفتار میں

کتاب 6

 

"ممبئی" کے مزید شعرا

Recitation

aah ko chahiye ek umr asar hote tak SHAMSUR RAHMAN FARUQI

بولیے