Jayant Parmar's Photo'

جینت پرمار

1955 | احمد آباد, انڈیا

ساہتیہ اکادمی انعام یافتہ، اردو میں دلت تجربے کو اظہار دینے والے پہلے شاعر

ساہتیہ اکادمی انعام یافتہ، اردو میں دلت تجربے کو اظہار دینے والے پہلے شاعر

جینت پرمار کے شعر

بستر پہ لیٹے لیٹے مری آنکھ لگ گئی

یہ کون میرے کمرے کی بتی بجھا گیا

دل کو دکھاتی ہے پھر بھی کیوں اچھی لگتی ہے

یادوں کی یہ شام سہانی دل میں قید ہوئی

ہر ایک شاخ کے ہاتھوں میں پھول مہکیں گے

خزاں کا پیڑ بھی کپڑے بدلنا چاہتا ہے

لمس کی وہ روشنی بھی بجھ گئی

جسم کے اندر اندھیرا اور ہے

جگنو تھا تارا تھا کیا تھا

دروازے پر کون کھڑا تھا

Recitation

aah ko chahiye ek umr asar hote tak SHAMSUR RAHMAN FARUQI

بولیے