noImage

کیف احمد صدیقی

1943 - 1986 | سیتا پور, ہندوستان

غزل 21

اشعار 14

اک برس بھی ابھی نہیں گزرا

کتنی جلدی بدل گئے چہرے

محسوس ہو رہا ہے کہ میں خود سفر میں ہوں

جس دن سے ریل پر میں تجھے چھوڑنے گیا

آج کچھ ایسے شعلے بھڑکے بارش کے ہر قطرے سے

دھوپ پناہیں مانگ رہی ہے بھیگے ہوئے درختوں میں

تنہائی کی دلہن اپنی مانگ سجائے بیٹھی ہے

ویرانی آباد ہوئی ہے اجڑے ہوئے درختوں میں

سرد جذبے بجھے بجھے چہرے

جسم زندہ ہیں مر گئے چہرے

کتاب 5

دلچسپ نظمیں

 

1971

گرد کا درد

 

1970

حساب لفظ لفظ کا

 

1985

سدا بہار نظمیں

 

1980

سورج کی آنکھ

 

1977

 

مزید دیکھیے

"سیتا پور" کے مزید شعرا

  • جگرؔ بسوانی جگرؔ بسوانی
  • انجم انصاری انجم انصاری
  • صفدر آہ سیتاپوری صفدر آہ سیتاپوری