Kailash Mahir's Photo'

کیلاش ماہر

1928 - | مراد آباد, ہندوستان

اشعار 3

جانے کیا سوچ کے ہم تجھ سے وفا کرتے ہیں

قرض ہے پچھلے جنم کا سو ادا کرتے ہیں

رشتۂ درد کی میراث ملی ہے ہم کو

ہم ترے نام پہ جینے کی خطا کرتے ہیں

تم بھی اس شہر میں بن جاؤ گے پتھر جیسے

ہنسنے والا یہاں کوئی ہے نہ رونے والا

  • شیئر کیجیے
 

ای- کتاب 2

لمحہ لمحہ پیاس

 

1991

لمس ھوا

 

1928

 

مزید دیکھیے

شعرا کے مزید "مراد آباد"

  • قاضی احتشام بچھرونی قاضی احتشام بچھرونی
  • گوہر عثمانی گوہر عثمانی
  • عارف حسن  خان عارف حسن خان
  • سبحان اسد سبحان اسد
  • فرحت علی خاں فرحت علی خاں
  • مجاہد فراز مجاہد فراز
  • منصور عثمانی منصور عثمانی
  • ضیا ضمیر ضیا ضمیر
  • منوج اظہر منوج اظہر
  • صغیر عالم صغیر عالم

Added to your favorites

Removed from your favorites