Momin Khan Momin's Photo'

مومن خاں مومن

1800 - 1852 | دلی, ہندوستان

غالب اور ذوق کے ہم عصر۔ وہ حکیم ، ماہر نجوم اور شطرنج کے کھلاڑی بھی تھے۔ کہا جاتا ہے کہ مرزا غالب نے ان کے شعر ’ تم مرے پاس ہوتے ہو گویا/ جب کوئی دوسرا نہیں ہوتا‘ پر اپنا پورا دیوان دینے کی بات کہی تھی

غالب اور ذوق کے ہم عصر۔ وہ حکیم ، ماہر نجوم اور شطرنج کے کھلاڑی بھی تھے۔ کہا جاتا ہے کہ مرزا غالب نے ان کے شعر ’ تم مرے پاس ہوتے ہو گویا/ جب کوئی دوسرا نہیں ہوتا‘ پر اپنا پورا دیوان دینے کی بات کہی تھی

شب جو مسجد میں جا پھنسے مومنؔ (ردیف .. ے)

ہو گئے نام_بتاں سنتے ہی مومنؔ بے_قرار (ردیف .. ن)

کیا جانے کیا لکھا تھا اسے اضطراب میں

ہے کچھ تو بات مومنؔ جو چھا گئی خموشی (ردیف .. و)

وہ جو ہم میں تم میں قرار تھا تمہیں یاد ہو کہ نہ یاد ہو

کسی کا ہوا آج کل تھا کسی کا

شب_وصال ہے گل کر دو ان چراغوں کو (ردیف .. ا)

تھی وصل میں بھی فکر_جدائی تمام شب