Shahbaz Khwaja's Photo'

شہباز خواجہ

انگلستان

شہباز خواجہ

غزل 17

اشعار 8

سفر کا ایک نیا سلسلہ بنانا ہے

اب آسمان تلک راستہ بنانا ہے

مجھے یہ ضد ہے کبھی چاند کو اسیر کروں

سو اب کے جھیل میں اک دائرہ بنانا ہے

متاع جاں ہیں مری عمر بھر کا حاصل ہیں

وہ چند لمحے ترے قرب میں گزارے ہوئے

اک ایسا وقت بھی صحرا میں آنے والا ہے

کہ راستہ یہاں دریا بنانے والا ہے

وہ ایک تو کہ ترے غم میں اک جہاں روئے

وہ ایک میں کہ مرا کوئی رونے والا نہیں

کتاب 1

 

Recitation

aah ko chahiye ek umr asar hote tak SHAMSUR RAHMAN FARUQI