Waqar Manvi's Photo'

وقار مانوی

1939 | دلی, ہندوستان

غزل 18

اشعار 12

ہماری زندگی کہنے کی حد تک زندگی ہے بس

یہ شیرازہ بھی دیکھا جائے تو برہم ہے برسوں سے

بہت سے غم چھپے ہوں گے ہنسی میں

ذرا ان ہنسنے والوں کو ٹٹولو

غریب کو ہوس زندگی نہیں ہوتی

بس اتنا ہے کہ وہ عزت سے مرنا چاہتا ہے

سلیقہ بولنے کا ہو تو بولو

نہیں تو چپ بھلی ہے لب نہ کھولو

کہاں ملے گی بھلا اس ستم گری کی مثال

ترس بھی کھاتا ہے مجھ پر تباہ کر کے مجھے

کتاب 7

آئینہ فن و شخصیت میں وقار مانوی

 

2010

غزل کے رنگ

 

2014

وقار آگہی

 

1991

وقار آگہی

 

1991

وقار غزل

 

2012

وقار ہنر

 

1998

وقار سخن

 

1978

 

"دلی" کے مزید شعرا

  • شیخ ظہور الدین حاتم شیخ ظہور الدین حاتم
  • داغؔ دہلوی داغؔ دہلوی
  • شاہ نصیر شاہ نصیر
  • حسرتؔ موہانی حسرتؔ موہانی
  • آبرو شاہ مبارک آبرو شاہ مبارک
  • بیخود دہلوی بیخود دہلوی
  • راجیندر منچندا بانی راجیندر منچندا بانی
  • انیس الرحمان انیس الرحمان
  • بہادر شاہ ظفر بہادر شاہ ظفر
  • شیخ ابراہیم ذوقؔ شیخ ابراہیم ذوقؔ