Zaheer Kashmiri's Photo'

ظہیر کاشمیری

1919 - 1994 | لاہور, پاکستان

ظہیر کاشمیری

غزل 39

نظم 1

 

اشعار 30

آہ یہ مہکی ہوئی شامیں یہ لوگوں کے ہجوم

دل کو کچھ بیتی ہوئی تنہائیاں یاد آ گئیں

سیرت نہ ہو تو عارض و رخسار سب غلط

خوشبو اڑی تو پھول فقط رنگ رہ گیا

  • شیئر کیجیے

کوئی دستک کوئی آہٹ نہ شناسا آواز

خاک اڑتی ہے در دل پہ بیاباں کی طرح

  • شیئر کیجیے

فرض برسوں کی عبادت کا ادا ہو جیسے

بت کو یوں پوج رہے ہیں کہ خدا ہو جیسے

ہمیں خبر ہے کہ ہم ہیں چراغ آخر شب

ہمارے بعد اندھیرا نہیں اجالا ہے

کتاب 8

 

ویڈیو 4

This video is playing from YouTube

ویڈیو کا زمرہ
کلام شاعر بہ زبان شاعر
At a mushaira

ظہیر کاشمیری

ہیں بزم_گل میں بپا نوحہ_خوانیاں کیا کیا

ظہیر کاشمیری

اب ہے کیا لاکھ بدل چشم_گریزاں کی طرح

ظہیر کاشمیری

تو اگر غیر ہے نزدیک_رگ_جاں کیوں ہے

ظہیر کاشمیری

"لاہور" کے مزید شعرا

Recitation

aah ko chahiye ek umr asar hote tak SHAMSUR RAHMAN FARUQI

Jashn-e-Rekhta | 2-3-4 December 2022 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate, New Delhi

GET YOUR FREE PASS
بولیے