وصی شاہ

غزل 53

نظم 6

اشعار 15

تمہارا نام لکھنے کی اجازت چھن گئی جب سے

کوئی بھی لفظ لکھتا ہوں تو آنکھیں بھیگ جاتی ہیں

اس جدائی میں تم اندر سے بکھر جاؤ گے

کسی معذور کو دیکھو گے تو یاد آؤں گا

کون کہتا ہے ملاقات مری آج کی ہے

تو مری روح کے اندر ہے کئی صدیوں سے

جو تو نہیں ہے تو یہ مکمل نہ ہو سکیں گی

تری یہی اہمیت ہے میری کہانیوں میں

زندگی اب کے مرا نام نہ شامل کرنا

گر یہ طے ہے کہ یہی کھیل دوبارہ ہوگا

  • شیئر کیجیے

کتاب 2

 

ویڈیو 9

This video is playing from YouTube

ویڈیو کا زمرہ
کلام شاعر بہ زبان شاعر

وصی شاہ

وصی شاہ

وصی شاہ

Wasi Shah reading his poetry at a mushaira

وصی شاہ

آنکھوں سے مری اس لیے لالی نہیں جاتی

وصی شاہ

باندھ لیں ہاتھ پہ سینے پہ سجا لیں تم کو

وصی شاہ

سمندر میں اترتا ہوں تو آنکھیں بھیگ جاتی ہیں

وصی شاہ

یہ کامیابیاں عزت یہ نام تم سے ہے

وصی شاہ

آڈیو 23

آج ہمیں یہ بات سمجھ میں آئی ہے

آنکھوں سے مری اس لیے لالی نہیں جاتی

اب جو لوٹے ہو اتنے سالوں میں

Recitation

aah ko chahiye ek umr asar hote tak SHAMSUR RAHMAN FARUQI

متعلقہ شعرا

"لاہور" کے مزید شعرا

Recitation

aah ko chahiye ek umr asar hote tak SHAMSUR RAHMAN FARUQI

Jashn-e-Rekhta | 2-3-4 December 2022 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate, New Delhi

GET YOUR FREE PASS
بولیے