Zameer Atraulvi's Photo'

ضمیر اترولوی

1959 | علی گڑہ, ہندوستان

غزل 6

اشعار 6

ہزاروں ظلم ہوں مظلوم پر تو چپ رہے دنیا

اگر مظلوم کچھ بولے تو دہشت گرد کہتی ہے

  • شیئر کیجیے

غریبی نام ہے جس کا عذاب جان ہوتی ہے

مگر دولت کی کثرت مہلک ایمان ہوتی ہے

  • شیئر کیجیے

خون کے جو رشتے تھے بن گئے عذاب جاں

ہم کو دل کے رشتوں سے استفادہ پہنچا ہے

  • شیئر کیجیے

عمر بھر جس نے کسی کا حکم مانا ہی نہیں

نفس کا اپنے مگر وہ شخص کارندہ رہا

  • شیئر کیجیے

کوئی بھوکا جو فرط ضعف سے کچھ لڑکھڑا جائے

تو دنیا طنز کستی ہے اسے مد مست کہتی ہے

  • شیئر کیجیے

"علی گڑہ" کے مزید شعرا

  • شہریار شہریار
  • اسعد بدایونی اسعد بدایونی
  • اختر انصاری اختر انصاری
  • سیدہ فرحت سیدہ فرحت
  • وفا نقوی وفا نقوی
  • آشفتہ چنگیزی آشفتہ چنگیزی
  • مہتاب حیدر نقوی مہتاب حیدر نقوی
  • راحت حسن راحت حسن
  • معین احسن جذبی معین احسن جذبی
  • خلیل الرحمن اعظمی خلیل الرحمن اعظمی