noImage

امانت لکھنوی

1815 - 1858 | لکھنؤ, ہندوستان

اپنے ناٹک ’اندرسبھا‘ کے لیے مشہور، اودھ کے آخری نواب واجد علی شاہ کے ہم عصر

اپنے ناٹک ’اندرسبھا‘ کے لیے مشہور، اودھ کے آخری نواب واجد علی شاہ کے ہم عصر

غزل 13

اشعار 15

بوسہ آنکھوں کا جو مانگا تو وہ ہنس کر بولے

دیکھ لو دور سے کھانے کے یہ بادام نہیں

کس طرح امانتؔ نہ رہوں غم سے میں دلگیر

آنکھوں میں پھرا کرتی ہے استاد کی صورت

  • شیئر کیجیے

جی چاہتا ہے صانع قدرت پہ ہوں نثار

بت کو بٹھا کے سامنے یاد خدا کروں

  • شیئر کیجیے

ای- کتاب 15

دیوان امانت

 

 

دیوان امانت

 

1872

دیوان امانت

 

1903

گلدستہ امانت

 

1887

اندر سبھا

 

1926

اندر سبھا

 

1981

اندر سبھا امانت

 

1950

اندر سبھا امانت

اندر سبھا مداری لال

 

اندر سبھا امانت باتصویر

 

 

اندر سبھا اور اندر سبھائیں

 

1980

آڈیو 10

آغوش میں جو جلوہ_گر اک نازنیں ہوا

الجھا دل_ستم_زدہ زلف_بتاں سے آج

بانی_جور_و_جفا ہیں ستم_ایجاد ہیں سب

Recitation

aah ko chahiye ek umr asar hote tak SHAMSUR RAHMAN FARUQI

شعرا متعلقہ

  • فصاحت لکھنوی فصاحت لکھنوی بیٹا

شعرا کے مزید "لکھنؤ"

  • ارشد عبد الحمید ارشد عبد الحمید
  • والی آسی والی آسی
  • خورشید طلب خورشید طلب
  • ابو الحسنات حقی ابو الحسنات حقی
  • اختر پیامی اختر پیامی
  • اسلم محمود اسلم محمود
  • احمد شناس احمد شناس
  • فرحان سالم فرحان سالم
  • انجم لدھیانوی انجم لدھیانوی
  • نظیر باقری نظیر باقری