noImage

حیات لکھنوی

1931 - 2006 | لکھنؤ, ہندوستان

غزل 9

اشعار 7

اب دلوں میں کوئی گنجائش نہیں ملتی حیاتؔ

بس کتابوں میں لکھا حرف وفا رہ جائے گا

یہ التجا دعا یہ تمنا فضول ہے

سوکھی ندی کے پاس سمندر نہ جائے گا

سلسلہ خوابوں کا سب یونہی دھرا رہ جائے گا

ایک دن بستر پہ کوئی جاگتا رہ جائے گا

ای- کتاب 4

اوراق عزیز

 

1999

دریا رواں رہے

 

1992

حصار آب

 

1977

وسیلہ

 

1996

 

شعرا متعلقہ

  • میرزا الطاف حسین عالم لکھنوی میرزا الطاف حسین عالم لکھنوی Uncle
  • عزیز لکھنوی عزیز لکھنوی والد

شعرا کے مزید "لکھنؤ"

  • ارشد علی خان قلق ارشد علی خان قلق
  • والی آسی والی آسی
  • میر علی اوسط رشک میر علی اوسط رشک
  • عادل لکھنوی عادل لکھنوی
  • گوپی ناتھ امن گوپی ناتھ امن
  • عاجز ماتوی عاجز ماتوی
  • ملک زادہ منظور احمد ملک زادہ منظور احمد
  • محسن زیدی محسن زیدی
  • عزیز بانو داراب وفا عزیز بانو داراب وفا
  • کرشن بہاری نور کرشن بہاری نور

Added to your favorites

Removed from your favorites