Meer Mehdi Majrooh's Photo'

میر مہدی مجروح

1833 - 1903 | دلی, انڈیا

میر مہدی مجروح

غزل 20

اشعار 37

چرا کے مٹھی میں دل کو چھپائے بیٹھے ہیں

بہانا یہ ہے کہ مہندی لگائے بیٹھے ہیں

  • شیئر کیجیے

کچھ عرض تمنا میں شکوہ نہ ستم کا تھا

میں نے تو کہا کیا تھا اور آپ نے کیا جانا

کیا ہماری نماز کیا روزہ

بخش دینے کے سو بہانے ہیں

  • شیئر کیجیے

غیروں کو بھلا سمجھے اور مجھ کو برا جانا

سمجھے بھی تو کیا سمجھے جانا بھی تو کیا جانا

  • شیئر کیجیے

شغل الفت کو جو احباب برا کہتے ہیں

کچھ سمجھ میں نہیں آتا کہ یہ کیا کہتے ہیں

  • شیئر کیجیے

رباعی 7

کتاب 7

 

متعلقہ شعرا

"دلی" کے مزید شعرا

Recitation

aah ko chahiye ek umr asar hote tak SHAMSUR RAHMAN FARUQI

بولیے