noImage

پروین ام مشتاق

1866 | دلی, ہندوستان

غزل 42

اشعار 38

آب دیدہ ہو کے وہ آپس میں کہنا الوداع

اس کی کم میری سوا آواز بھرائی ہوئی

وہ ہی آسان کرے گا مری دشواری کو

جس نے دشوار کیا ہے مری آسانی کو

  • شیئر کیجیے

نہ آیا کر کے وعدہ وصل کا اقرار تھا کیا تھا

کسی کے بس میں تھا مجبور تھا لاچار تھا کیا تھا

کتاب 3

دیوان پرویں

 

 

دیوان پروین

 

 

دیوان پروین

 

1913

 

آڈیو 5

بدلی ہوئی ہے چرخ کی رفتار آج_کل

نئے غمزے نئے انداز نظر آتے ہیں

نہ آیا کر کے وعدہ وصل کا اقرار تھا کیا تھا

Recitation

aah ko chahiye ek umr asar hote tak SHAMSUR RAHMAN FARUQI

"دلی" کے مزید شعرا

  • مفتی صدرالدین آزردہ مفتی صدرالدین آزردہ
  • اشرف علی فغاں اشرف علی فغاں
  • بیخود دہلوی بیخود دہلوی
  • ساحر دہلوی ساحر دہلوی
  • حسرتؔ موہانی حسرتؔ موہانی
  • میر مہدی مجروح میر مہدی مجروح
  • ظہیرؔ دہلوی ظہیرؔ دہلوی
  • زین العابدین خاں عارف زین العابدین خاں عارف
  • مصطفیٰ خاں شیفتہ مصطفیٰ خاں شیفتہ
  • بلراج کومل بلراج کومل