رضی رضی الدین

غزل 11

نظم 4

 

اشعار 14

اس کا جلوہ دکھائی دیتا ہے

سارے چہروں پہ سب کتابوں میں

نشۂ یار کا نشہ مت پوچھ

ایسی مستی کہاں شرابوں میں

تمام رات ترا انتظار ہوتا رہا

یہ ایک کام یہی کاروبار ہوتا رہا

  • شیئر کیجیے

اس اندھیرے میں جلتے چاند چراغ

رکھتے کس کس کا وہ بھرم ہوں گے

جگہ بچی ہی نہیں دل پہ چوٹ کھانے کی

اٹھا لو کاش یہ عادت جو آزمانے کی

  • شیئر کیجیے

Recitation

aah ko chahiye ek umr asar hote tak SHAMSUR RAHMAN FARUQI

Jashn-e-Rekhta | 2-3-4 December 2022 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate, New Delhi

GET YOUR FREE PASS
بولیے