Sadique Naseem's Photo'

صادق نسیم

1924 | پاکستان

غزل 16

اشعار 3

تمہارا نام کسی اجنبی کے لب پر تھا

ذرا سی بات تھی دل کو مگر لگی ہے بہت

  • شیئر کیجیے

جب بھی تری قربت کے کچھ امکاں نظر آئے

ہم خوش ہوئے اتنے کی پریشاں نظر آئے

  • شیئر کیجیے

زندہ رہنے کے تھے جتنے اسلوب

زندگی کٹ گئی تب یاد آئے

  • شیئر کیجیے
 

کتاب 1

ریگ رواں

 

1979

 

تصویری شاعری 3

جب بھی تری قربت کے کچھ امکاں نظر آئے ہم خوش ہوئے اتنے کی پریشاں نظر آئے

تمہارا نام کسی اجنبی کے لب پر تھا ذرا سی بات تھی دل کو مگر لگی ہے بہت

تمہارا نام کسی اجنبی کے لب پر تھا ذرا سی بات تھی دل کو مگر لگی ہے بہت