Ghulam Murtaza Rahi's Photo'

غلام مرتضی راہی

1937 | فتح پور, ہندوستان

غزل 34

اشعار 48

اب اور دیر نہ کر حشر برپا کرنے میں

مری نظر ترے دیدار کو ترستی ہے

کوئی اک ذائقہ نہیں ملتا

غم میں شامل خوشی سی رہتی ہے

  • شیئر کیجیے

ہر ایک سانس مجھے کھینچتی ہے اس کی طرف

یہ کون میرے لیے بے قرار رہتا ہے

  • شیئر کیجیے

ای- کتاب 11

الکلام

 

2000

حرف مکرر

 

1997

کلیات راہی

 

2012

لا مکان

 

1937

لا مکان

 

 

لا مکاں

 

1937

لاریب

 

1971

لاریب

 

1973

لا شعور

 

2006

راہی کی سرگزشت

 

2009

شعرا کے مزید "فتح پور"

  • ارشد عبد الحمید ارشد عبد الحمید
  • خورشید طلب خورشید طلب
  • شعیب نظام شعیب نظام
  • ابو الحسنات حقی ابو الحسنات حقی
  • اختر پیامی اختر پیامی
  • اسلم محمود اسلم محمود
  • والی آسی والی آسی
  • احمد شناس احمد شناس
  • رسا رامپوری رسا رامپوری
  • فرحان سالم فرحان سالم